جواں ملکہ نے جب بیٹا جنا تھا/rafiq sandeelvi

noorulain's picture

جواں ملکہ نے جب بیٹا جنا تھا
اُسی دن بادشہ اندھا ہوا تھا

محلوں میں ضیافت اڑ رہی تھی
بھکاری شہر میں بھوکا رہا تھا

نہیں تھا اُس طرف تیراک کوئی
جدھر سیلاب کا پانی بڑھا تھا

تری بیماری کے خط مل رہے تھے
میں کالج کے جھمیلوں میں پڑا تھا

میں دادا جان کی ٹوٹی لحد کو
اٹھارہ سال سے بھولا ہوا تھا

رفیق سندیلوی