زمیں پر اژدہا پھنکارتا تھا/rafiq sandeelvi

noorulain's picture

زمیں پر اژدہا پھنکارتا تھا
کوئی کاہن خلا میں گھورتا تھا

رکابی میں دھری تھیں سرخ آنتیں
پیالے میں لہو رکھا ہوا تھا

پڑا تھا دودھ خالی کھوپڑی میں
دھواں برتن کے منہ سے اٹھ رہا تھا

کہیں دیوار سے کھالیں ٹنگی تھیں
کہیں مُردے کا پنجر جھولتا تھا

کہیں چربی پگھلتی تھی چتا پر
کہیں شعلوں پہ مینڈک بھن رہا تھا

رفیق سندیلوی