کہو کہ سینہ ہی جب ھو آہ و بکا گزیدہ

IN Khan's picture

کہو کہ سینہ ہی جب ھو آہ و بکا گزیدہ
بتاؤ کیسے بچے کوئی بد دعا گزیدہ

سنا کہ پانی بھی مانگنے کی مہلت نہ ملی
کہا کہ حیرت سے مر گیا آشنا گزیدہ

سنو یہ ساری دوائیں جبر و جفا کی دے دیں
کہو کرائے علاج کیسے وفا گزیدہ

بتاؤ کیوں عاجزی میں تم نے پناہ لے لی
کہا کہ سارا جہاں ھے مار انا گزیدہ

کہو کہ شیشہ ھوا تو کتنا ہوا ھے چھلنی
کہا کہ سارا ھی عکس ھے آئینہ گزیدہ

سنا کہ بستی ہے، بھوک ہے، سگ ہے اور گداگر
کہا کہ نکلے گا اب کے سگ ہی گدا گزیدہ

بتاؤ ہر شام کیوں ٹپکتا ھے خوں شفق پر
کہا کہ ہر اک دن جو ٹھہرا ضیا گزیدہ

کہا گرے شجر، کہیں پھول سربریدہ
عدیم سارا چمن ہی نکلا ھوا گزیدہ

No votes yet