Verses

ایسا ترا رہ گزر نہ ہوگا
ہر گام پہ جس میں سر نہ ہوگا

کیا اُن نے نشے میں مجھ کومارا
اتنا بھی تو بے خبر نہ ہوگا

دشنوں سے کسی کا اتنا ظالم
ٹکڑے ٹکڑے جگر نہ ہوگا

اب دل کے تئیں دیا تو سمجھا
محنت زدوں کے جگر نہ ہوگا

(ق)

دنیا کی نہ کر تو خواست گاری
اس سے کبھو بہرہ ور نہ ہوگا

آ خانہ خرابی اپنی مت کر
قحبہ ہے یہ اس سے گھر نہ ہوگا

پھر نوحہ گری کہاں‌ جہاں میں
ماتم زدہ میرؔ اگر نہ ہوگا

Author

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer