زندگی کس طرح گزاری ہے

Verses

قطعہ

زندگی کس طرح گزاری ہے
کوئی پوچھے تو کیا بتائیں گے
تیرے ملنے کی آرزو میں رہے
فخر سے برملا بتائیں گے

شاہین فصیح ربانی