عجیب خطہء تعبیر خواب کو دوں گا/rafiq sandeelvi

Verses

عجیب خطہء تعبیر خواب کو دوں گا
میں ایک خاک کی جاگیر خواب کو دوں گا

میں کاٹ دوں گا اندھیرے میں اُس شبیہ کا ہاتھ
کسی طلسم کی شمشیر خواب کو دوں گا

رکھوں گا ایک طلائی ستارے کی بنیاد
اور ایک وعدہء تعمیر خواب کو دوں گا

بدن سے پھوٹے گی لذت ،مٹھاس اورخوشبو
شراب و عورت و انجیر خواب کو دوں گا

میں جیت لوں گا کسی رات چاند کا میدان
اور ایک جراءت تسخیر خواب کو دوں گا

رفیق سندیلوی