Verses

ہم اُنہیں جی سے پیار کرتے ہیں
وہ کہاں اعتبار کرتے ہیں

منتظر ہیں مرے جنازے کے
وہ مرا انتظار کرتے ہیں

غیر کی بات اور جھوٹی بات
آپ ہی اعتبار کرتے ہیں

دلربا بھی ہے دل بھی ہے معشوق
ہم تو دونوں کو پیار کرتے ہیں

جان جھپٹی، کسی کا دل لوٹا
وہ یوں ہی لوٹ مار کرتے ہیں

اُن سے وہ حشر تک نہیں ملتے
جن کو اُمیدوار کرتے ہیں

دل کی بالیدگی سے جی خوش ہے
ایک کو ہم ہزار کرتے ہیں

حال جب پوچھتا ہے ہم سے کوئی
نالے بے اختیار کرتے ہیں

Author

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer