غم کا غبار آنکھ میں ایسے سما گیا

Verses

غم کا غبار آنکھ میں ایسے سما گیا
ہر منظرِ حسیں پہ دھندلکا سا چھا گیا

دل میں مکیں تھا کوئی تو جلتے رہے چراغ
جاتے ہوئے وہ شوخ انہیں بھی بجھا گیا

دل تھا، مسرتیں تھیں، جوانی تھی، شوق تھا
لیکن غمِ زمانہ ہر اک شئے کو کھا گیا

برباد دل میں جوشِ تمنا کا دم نہ پوچھ
صحرا میں جیسے کوئی بگولے اڑا گیا

کچھ سوچ کر ہمارے گریباں کی وضع پر
عہدِ بہار جاتے ہوئے مسکرا گیا

دل کا ہجومِ غم سے عدم اب یہ حال ہے
دریا پہ جیسے شام کو سکتہ سا چھا گیا

نیلا میرا وجود گھڑی بھر میں کر گیا

Verses

نیلا میرا وجود گھڑی بھر میں کر گیا
وہ زہر کی طرح مرے دل میں اتر گیا

پلکیں لرز کے رہ گئیں اور دیپ بجھ گئے
الزام اب کے بار بھی آندھی کے سر گیا

اب کس لئے سنبھال کے رکھوں بصارتیں
آنکھوں سے خواب چھین کے جب خواب گر گیا

اس سے بچھڑ کے دل کا ہوا ہے عجیب حال
پانے کی آرزو گئی، کھونے کا ڈر گیا

جب موسموں نے پھر سے بغاوت کی ٹھان لی
ٹہنی پہ پھول کھلنے سے پہلے بکھر گیا

بہتر ہے خود رفو گری سیکھوں کہ آج تو
گھاؤ کھلے ہی چھوڑ کے وہ چارہ گر گیا

اس پر یقیں بحال ہوا تو وہ ایک دم
اقرار کے مقام پہ آ کر مکر گیا

آنکھوں سے نیند، دل سے سکوں ہوگیا جدا
لگتا ہے اپنے ساتھ کوئی ہاتھ کر گیا

سورج نے ساتھ چھوڑا تو دیکھا پلٹ کے تب
سوچا، جو ساتھ چلتا تھا سایہ کدھر گیا

Chalkaaye Jaam Aayi Yeh

Chhalakaye jaam aaeeye aap kee aankhon ke naam hothhon ke naam

phool jaise tan pe jalawe ye rang-o-boo ke
aaj jaam-e-may uthe in hothhon ko chhoo ke
lachakaeeye shaakh-e-badan mahakaeeye zulfon kee shaam
chhalakaye jaam aaeeye aap kee aankhon ke naam

aap hee kaa naam lekar pee hai sabhee ne
aap par dhadak rahe hai, pyaalon ke seene
yahaan ajanabee koee nahee, ye hai aap kee mahafil tamaam
chhalakaye jaam aaeeye aap kee aankhon ke naam

بے موت ہی مر جائيں گے کسی دن

Verses

بے موت ہی مر جائيں گے کسی دن

ہم تم کو یوں آزمائيں گے کسی دن
بے موت ہی مر جائيں گے کسی دن

یوں تو آوارگی کا سفر جاری ہے
سوچا ہےگھر جائيں گے کسی دن

ہر قدم پر گناہ کرنے والے سن لیں
گھڑے پاپ کے بھر جائيں گے کسی دن

اگر ظالم تیری بے رخی جاری رہی
راہ میں تجھ سے بچھڑ جائيں گے کسی دن

گر دیکھنا ہے معجزہ محبت دنیا کو
سفینے ڈوبتے بھی ابھر جائيں گے کسی دن

عثمان کو آزمانے والے سن لیں اب
ہم ہر حد سے گزر جائيں گے کسی دن

Mahafil Mein Baar Baar Kisi Par Nazar Gayi

mahafil mein baar baar kisi par nazar gayi
hamane bachaayi laakh magar phir udhar gayi

unaki nazar mein koyi jaaduu zuruur hai
jis par padi usi ke jigar tak utar gayi

us bewafa ki aankh se aansuu chhalak pade
hasarat bhari nigaah bada kaam kar gayi

unake jamaal-e-ruk pe unhin ka jamaal tha
wo chal diye to raunak-e-shaam-o-sahar gayi

unako kabar karo ke hai ' bismil' qarib-e-marg
wo aayenge zuruur jo un tak kabar gayi

Dhak Dhak Se Dhadakan Bhula De

dhak-dhak se dhadaknaa bhulaa de
chhan-chhan se chhanakna sikhaa de -2
mere dil ko piro ke paayal mein -2
ho gorii -2
ghungharu bana de
dhak-dhak se...

chhan-chhan chhan-chhan chhan-chhan -2

mujhase bhale - 2
chaandi ke batan tere jo kurte pe tuune lagaae
vo paas kitne main duur kitna kaise mujhe chain aaye
kuchh aur nahi to kadmon mein - 2
ho thodi si jagah de
ghungharu bana de
dhak-dhak se...

Day By Day Mera Pyar Badhe

sunday monday tuesday wednesday thursday friday saturday sunday
when we are together everyday in funday
7 days a week i wanna kiss your lips i wanna kiss your chicks - 2

day by day mera pyar badhe mera pyar badhe tere liye
day by day mujhe yeh lage tu bani hai mere liye
day by day mera pyar badhe mera pyar badhe tere liye
day by day mujhe yeh lage tu bani hai mere liye
jab jab tu mere saamane aaye
tab tab meri jaan yeh jaaye
yeh dil bole haai haai tere liye

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer