Verses

ہو آدمی اے چرخ ترکِ گردشِ ایّام کر
خاطر سے ہی مجھ مست کی تائید دورِ جام کر

دنیا ہے بے صرفہ نہ ہو رونے میں یا کڑھنے میں تو
نالے کو ذکرِ صبح کر گریے کو وردِ شام کر

جتنی ہو ذلت خلق میں اتنی ہے عزت عشق میں
ناموس سے آ درگزر بے ننگ ہو کر نام کر

مر رہ کہیں بھی میر جا سرگشتہ پھرنا تاکجا
ظالم کسو کا سن کہا کوئی گھڑی آرام کر

Author

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer