مری راتوں کی راحت دن کا اطمینان لے جانا

Verses

مری راتوں کی راحت دن کا اطمینان لے جانا
تمہارے کام آجائے گا‘ یہ سامان لے جانا

تمہارے بعد کیا رکھنا اَنا سے واسطہ کوئی؟
تم اپنے ساتھ میرا عمر بھر کا مان لے جانا

شکستہ سے کچھ ریزے پڑے ہیں فرش پر‘چن لو
اگر تم جوڑ سکتے ہو تو یہ گلدان لے جانا

ادھر الماریوں میں چند اوراق پریشاں ہیں
مرے یہ باقی ماندہ خواب میری جان لے جانا

تمہیں ایسے تو خالی ہات رخصت کرنہیں سکتے
پرانی دوستی ہے اس کی کچھ پہچان لے جانا

ارادہ کر لیا ہے تم نے گر سچ مچ بچھڑنے کا!
تو پھر اپنے یہ سارے وعدہ وپیمان لے جانا

اگر تھوڑی بہت ہے شاعری سے اُن کو دلچسپی
تو ان کے سامنے تم میرا یہ دیوان لے جانا

Upar Khuda Asmaan - Male Version

Upar khuda asmaan neeche jaha
sab hain magar haaye tujhe dhoonde nazar
tu aaya na aayi khabar
saathiya beliya saathiya beliya
kache dhaage sache pyaar ke na todna
tere bin
tere bin nahi jeena mar jaana dholna
tere bin nahi jeena mar jaana dholna
tere bin nahi jeena mar jaana dholna
tere bin nahi jeena mar jaana dholna
saathiya beliya saathiya beliya
Tere bin nahi jeena maar jaana dholna

کیا قیامت تھی، کیا قیامت تھی

Verses

کیا قیامت تھی، کیا قیامت تھی
صاحبو ہم کو جب محبت تھی

سرزنش کے لئے ہی آجاتے
آپ کو اس میں کیا قباحت تھی

ہوش آیا تو یہ ہوا معلوم
بے خودی کس قدر غنیمت تھی

غم نے مجبور کردیا ورنہ
بات سننے کی کس کو فرصت تھی

وقتِ آخر جو آپ آئے ہیں
آخر اس کی بھی کیا ضرورت تھی

بڑھ گئی اور جتنی صرف ہوئی
یاد اس کی عجیب دولت تھی

وقتِ رخصت جو آنکھ بھر آئی
وہ بھی اک صورتِ عبادت تھی

شعر سرور کے کچھ برے تو نہ تھے
سادگی ان میں تھی حلاوت تھی

کی وفا ہم سے تو غیر اس کو جفا کہتے ہیں

Verses

کی وفا ہم سے تو غیر اس کو جفا کہتے ہیں
ہوتی آئی ہے کہ اچھوں کو برا کہتے ہیں

آج ہم اپنی پریشانئِ خاطر ان سے
کہنے جاتے تو ہیں، پر دیکھئے کیا کہتے ہیں

اگلے وقتوں کے ہیں یہ لوگ، انہیں کچھ نہ کہو
جو مے و نغمہ کو اندوہ رُبا کہتے ہیں

دل میں آ جائے ہے، ہوتی ہے جو فرصت غش سے
اور پھر کون سے نالے کو رسا کہتے ہیں

ہے پرے سرحدِ ادراک سے اپنا مسجود
قبلے کو اہلِ نظر قبلہ نما کہتے ہیں

پائے افگار پہ جب سے تجھے رحم آیا ہے
خارِ رہ کو ترے ہم مہرِ گیا کہتے ہیں

اک شرر دل میں ہے اُس سے کوئی گھبرائے گا کیا
آگ مطلوب ہے ہم کو ،جو ہَوا کہتے ہیں

دیکھیے لاتی ہے اُس شوخ کی نخوت کیا رنگ
اُس کی ہر بات پہ ہم ’نامِ خدا‘ کہتے ہیں

وحشت و شیفتہ اب مرثیہ کہویں شاید
مر گیا غالب آشفتہ نوا، کہتے ہیں

Aayi Bahaar Aayi

Ko is for Chorus
La is for Lata Mageshkar

ko : aayi bahaar aayee, aayi bahaar -2
la : aayi bahaar jiya dole moraa, jiya dole moraa, jiya dole re
ko : jiya dole re
la : jaaga hain pyaar man bole mora, man bole mora, man bole re
ko : man bole re
la : aayi bahaar jiya dole mora ...

Ae Chaand Pyaar Mera

ae chaand pyaar mera,tujh se ye keh raha hai
tu be-wafa na hona
tu be-wafa na hona,duniya to be-wafa hai
ae chaand pyaar mera

nikharegi choudavinh ko,jis dam teri jawaani
mit jaayegi jahaan se,us dam meri kahaani
sab aasare to chhoote,
sab aasare to chhoote,ek tera aasara hai
ae chaand pyaar mera

ki hai agar muhobbat, tu ne kabhi kisi se
O, aasamaan ke pyaare, phir arz hai tujhi se
poora kabhi na hona, ye meri iltaja hai
ae chaand pyaar mera

Posted by: p u r n i m a

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer